سنٹرل یونیورسٹی گلبرگہ میں شعبہ اُردو کے قیام کا مطالبہ

گلبرگہ ۱۸؍مارچ(یو این این )جناب عبدالرزاق رفعت چیف کنونیر حیدرآباد کرناٹک مسلم فورم گلبرگہ نے عزت مآب صدر ہند شری پرنب مکھرجی و مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل شریمتی سمرتی ایرانی کو اپنے ایک مکتوب میں لکھا ہے کہ گلبرگہ میں سنٹرل یونیورسٹی کا قیام یقینا ایک بڑا کارنامہ ہے شری ملیکارجن کھرگے جی اور جناب الحاج قمرالاسلام صاحب و دیگر قائدین کی کاوشوںکے سبب اس یونیورسٹی کا قیام عمل میں آیا۔ اس علاقے کے تم ...

Read more

جو جگہ ایک بار مسجد اور عباد ت کے لیے مختص ہوجائے وہ تا قیامت مسجد رہتی ہے۔۔ محمداعجاز عرفی قاسمی

نئی دہلی۔18مارچ(یو این این)بی جے پی کے شعلہ فشاں لیڈر ڈاکٹر سبرامنیم سوامی کے مختلف اخبارات میں شائع ہونے والے حالیہ بیان’مسجد ایک عمارت ہے، کوئی مذہبی جگہ نہیں اور اس کو کبھی بھی منہدم کیا جاسکتا ہے‘ پر اپناشدید ر د عمل ظاہر کرتے ہوئے آل انڈیا تنظیم علماء حق کے قومی صدر اور معروف عالم دین مولانا محمداعجاز عرفی قاسمی نے ایک پریس نوٹ میں یہ کہا ہے کہ مسجد ایک مقدس و پاکیزہ مقام اور عبادت کی جگہ ہے، اور جو ج ...

Read more

حضورﷺ کی سیرت پاک تمام لوگوں کے لئے مشعل راہ ہے:ارشاد ثقافی

لکھنؤ پریس ریلیز آج تکروہی اندرا نگر میں جلسۂ سیرت النبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم کا انقاد کیا گیا،اس موقع پر سیرت النبی کے موضوع پر خطاب کرتے ہوئے ایم ایس او آف انڈیا کے ریاستی صدر ارشاد ثقافی نے کہا کہ آج ضرورت اس بات کی ہے کہ حضوراکرم صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم کے سیرت کے مختلف پہلوؤں کو جانیں آپ کی انفرادی ،اجتماعی اور گھریلو زندگی تک کوئی ایسا پہلو نہیں ہے جس میں آپ کی حیات طیبہ سے ...

Read more

مودی جی مزد وروں اور مالکوں کے مفاد میں توازن ضروری

منظر پس منظر…………………………………عبیداللہ ناصر ہندوستان میں 90کی دہائی میں معاشی اصلاحات کے آغاز کے ساتھ ہی لیبر قوانین میں اصلاحات کی آوازیں اٹھنے لگی تھیں ۔ معاشی امور کے ماہرین صنعت کاروں اور سر مایہ کاروں کا کہنا تھا کہ کھلی معیشت کے دور میں سوشلزم کے زمانہ کے لیبر قوانین لاگو نہیں رکھے جاسکتے کیونکہ کوئی بھی آجر پیدا واریت سے کسی بھی طرح کا کھلواڑ بر داشت نہیں کر سکتا۔ بغیر منافع کے کسی بھی کارخانہ یا ادارہ ...

Read more

بابری مسجد سے د ستبرداری کا فارمولا

معصوم مرادآبادی بابری مسجد کے مقام پر رام مندر بنانے کی تازہ کوششوں نے ایک بار پھر مسلمانوں میں بے چینی اور اضطراب پیدا کردیا ہے ۔ گزشتہ ہفتہ کانچی پیٹھ کے شنکراچاریہ کی لکھنؤ کے ایک مولانا سے ملاقات کو میڈیا نے جس انداز میں اجاگر کیا ہے، اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ مسلمانوں کی نمائندہ تنظیموں سے منہ کی کھا کر اب وشوہندو پریشد نے بعض ایسے علماء سے سازباز شروع کردی ہے جو سستی شہرت اور جاہ پرستی پر یقین رکھتے ہی ...

Read more
Scroll to top