بٹ کوائن کرنسی کی سائنس: کیا اس میں انویسٹمنٹ کرنی چاہیے؟

آج کل میرے کئی دوست بٹ کوائن اور کرپٹو کرنسی کی دنیا میں پوری طرح غرق ہیں ۔ سب نے مل کر واٹس ایپ پر ایک گروپ بنا رکھا ہے جہاں سب ایک دوسرے کو نئی نئی کرنسیوں کے بارے میں دلچسپ آرٹیکل اور ریسرچ پیپرز بھیجتے ہیں۔ شروع میں تو میں نے نظر انداز کیا لیکن پھر اخبارات میں بٹ کوائن کی بڑھتی ہوئی قیمت کے بارے میں پڑھا تو جھنجھلا کے مگر رازداری میں نکموں کے بھیجے ہوئے ریسرچ پیپرز بھی پڑھے۔   21جولائی کو میں نے ...

Read more

جِس طرح سوکھے ہوئے پھول فیس بُک میں ملیں

ہم فیس بُک کے عہد میں زندہ ہیں، بلکہ ہم میں سے بہت سے تو بس فیس بُک پر زندہ ہیں۔ اِس سماجی ویب سائٹ نے ہمارے طور طریقوں کو بدل کر رکھ دیا ہے، محبت ہی کے چلن کو لیجیے۔ کبھی محبت پہلے دیدار اور نظروں کے وار سے شروع ہوتی تھی، کئی روز تک پیچھا کرکے اپنی سنجیدگی کا یقین دلایا جاتا تھا، پھر ڈائجسٹوں کے شعری انتخاب سے شعر منتخب کرکے بڑی محنت سے خط لکھا جاتا، جس پر ناپید مصورانہ صلاحیت صَرف کرکے بھدّا سا دل بنایا ا ...

Read more

نیتن یاھو کی برسوں پرمحیط ’کرپشن کہانی‘!

اسرائیل میں اقتدار کی کشتی پر سوار ہونے والوں نے صہیونی ریاست کے خزانے کو حسب توفیق خوب چرکے لگائے مگرموجودہ وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کی کرپشن کی کہانی اس کے ما سوا ہے۔ مرکزاطلاعات فلسطین نے ایک خصوصی رپورٹ میں نیتن یاھو کی کرپشن کی طویل کہانی پر روشنی ڈالی ہے۔ اسرائیلی عدالتوں میں آنے والے کرپشن کے بڑے بڑے کیسز جن مین سیاسی، فوجی، مذہبی اور سماجی شخصیات ملوث رہی ہیں۔ ...

Read more

عراقی زائرین قیمتی پتھروں کے تاجروں کیلئے منافع بخش

شیعہ مسلمانوں کے نزدیک ’مقدس‘ عراقی شہر نجف کی زیارت کو جانے والے افراد وہاں قیمتی پتھروں کے تاجروں کے کاروبار میں منافع کا بڑا ذریعہ ہیں۔ ان زائرین کا تعلق پاکستان اور ایران کے علاوہ دیگر مسلم ممالک سے ہوتا ہے۔ محمد الغریفی جب بھی زیارت کے لیے نجف جاتے ہیں تو واپسی پر اْن کے ہاتھ میں قیمتی پتھر سے مزین کوئی نئی انگوٹھی ہوتی ہے۔ شیعہ مسلمانوں کے نزدیک اس ’مقدس‘ عراقی شہر جانے والے زائرین کے لیے انگوٹھی خرید ...

Read more

میانمار کے رخائن میں ہم نے کیا دیکھا؟

میانمار یعنی برما کے رخائن صوبے کے تقریبا تین لاکھ روہنگیا مسلمان جو گذشتہ دو ہفتوں کے دوران بھاگ کر بنگلہ دیش پہنچے ہیں وہ تمام شمالی اضلاع مونگدا، بوتھی دونگ اور راتھے دونگ سے آتے ہیں۔ یہ میانمار کے وہ آخری علاقے ہیں جہاں روہنگیا مسلمانوں ایک بڑی تعداد محض پناہ گزین کیمپوں تک محدود نہیں ہے۔ ان علاقوں تک پہنچنا بہت مشکل ہے۔ سڑکیں انتہائی خراب ہیں، یہاں جانے کے لیے حکومت سے اجازت لینی پڑتی ہے جو صحافیوں کو ...

Read more

Copyright © Dailyaag - All Rights Reserved

Scroll to top