یو جی سی کا سرکاری آڈٹ میں مشورہ، AMU سے ‘M’ اور BHU سے ‘H’ ہٹا دیں

نئی دہلی: مرکزی یونیورسٹیوں کے ایک سرکاری آڈٹ میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) اور بنارس ہندو یونیورسٹی (بي ایچ یو) کے نام سے ‘مسلم’ اور ‘ہندو’ لفظ ہٹانے کا مشورہ دیا گیا ہے. لہذا یونیورسٹیوں کے ‘سیکولر کردار’ دکھایا جا سکتا ہے.

ایک انگریزی اخبار کے مطابق، یونیورسٹی گرانٹ کمیشن (یو جی سی) کی طرف سے پیدا ہوتا پانچ کمیٹیوں میں سے ایک نے یہ آڈٹ 25 اپریل کو انسانی وسائل (اےچارڈي) وزارت کے کہنے پر کیا تھا. وزارت 10 مرکزی یونیورسٹیوں میں غیر قانونی حد تک شکایات کی تحقیقات کرنا چاہتا تھا.

یہ کہا جاتا ہے کہ بی ایچ یو ایم ایم یو آڈٹ میں شامل نہیں تھا. تاہم، کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں یہ حوالہ دیا ہے. اے ایم یو سے ہٹ کر جن یونیورسٹیوں کا تعلیمی، تحقیق، مالی اور بنیادی ساخت آڈٹ کرایا گیا، ان میں پاڈچےري یونیورسٹی، الہ آباد یونیورسٹی، اتراکھنڈ کی حقانی نیٹ ورک نندن بہوگنا گڑھوال یونیورسٹی، جموں کی سینٹرل یونیورسٹی، جھارکھنڈ کی مرکزی یونیورسٹی، راجستھان کی مرکزی یونیورسٹی، تریپورہ کی مہارا، سنٹرل یونیورسٹی، مدھ پردیش ہری سنگھ گور یونیورسٹی برطانیہ کے مہاتما گاندھی انٹرنیشنل ہندی یونیورسٹی وردوہ شامل ہیں.

Leave a Comment

Copyright © Dailyaag - All Rights Reserved

Scroll to top