گورکھپور میں بچوں کی موت پر بولے ستيارتھي- یہ ہے ‘ قتل عام ‘

لکھنؤ: گورکھپور کے بابا راگھو غلام (بی آر ڈی) میڈیکل کالج میں بچوں کی موت پر نوبل انعام یافتہ کیلاش ستیارتھی نے گہرا دکھ ظاہر کیا ہے. انہوں نے اس کے لئے اتر پردیش کی حکومت کو مورد الزام ٹھہرایا ستیارتھی نے ایک ٹویٹ کرکے پوچھا کہ ‘کیا بچوں کے لئے بھارت کی آزادی کے 70 سالوں کا مطلب یہی ہے؟’

کیلاش ستیارتھی نے یوپی کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ سے اپیل کی کہ وہ خود اس معاملے کو دیکھیں. انہوں نے کہا کہ طبی میدان میں دہائیوں سے چل رہے بدعنوانی کو ختم کیا جانا چاہئے. ستیارتھی نے لکھا، ’30 بچوں کی موت کوئی ‘حادثہ’ نہیں بلکہ ‘اجتماعی قتل’ ہے. ‘
بتا دیں، کہ گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے 48 اور دیگر وجوہات سے کل 60 مریضوں کی موت ہوئی ہے. بتایا جا رہا ہے کہ 69 لاکھ روپے کی ادائیگی نہ ہونے کی وجہ سے آکسیجن سپلائی کرنے والی کمپنی نے فراہمی جمعرات کی رات سے ٹھپ کر دی حالانکہ اسپتالل انتظامیہ نے آکسیجن کی کمی سے انکار کیا ہے.

Leave a Comment

Copyright © Dailyaag - All Rights Reserved

Scroll to top