راہل کی تاج پوشی پر کانگریس کے رہنما نے اٹھائے سوال

نئی دہلی: راہل گاندھی کے کانگریس کے صدر بن جانے سے پہلے انکے خلاف آواز اٹھی ہے۔ ٹی وی چینلز پر اکثر پارٹی کا دفاع کرنے والے پارٹی کے لیڈر شہزاد پونہ والا نے راہل کو پارٹی کا صدر بنائے جانے پر کئی سوال اٹھا دئے ہیں. پونہ والا کے بیان کے بعد پارٹی میں افرا تفری مچ گئی ہے۔ کیونکہ شہزاد سونیا گاندھی کے داماد رابرٹ واڈرا کے بہنوئی تحسین پونہ والا کے بھائی ہیں. شہزاد نے راہل گاندھی کے منتخب ہونے کی پوری کارروائی کو ہی مسترد کردیا ہے. انہوں نے ایک خاندان سے صرف ایک کو ہی پوزیشن دینے کی بات کی ہے۔


شہزاد پونہ والا نے پارٹی کے اندر اندر جمہوریت کو لے کر سنجیدہ سوال کیئے ہیں اور کہا ہے کہ کانگریس صدر کا الیکشن مکمل طور درست ہے. پوناوالا نے انتخابات کے عمل پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ پارٹی صدر کے لئے ہونے والا انتخابات، الیکشن نہیں بلکہ انتخابات ہے. انتخابات کا عمل منافق ہے. پوناوالا نے کہا کہ میرے پاس اس بات کی معلومات ہے کہ جو نمائندے پارٹی صدر کے انتخاب کے لئے ووٹ ڈالنے جا رہے ہیں، وہ خفیہ طور پر درست ہیں. وہ صرف اس کی وفاداری کے لئے مقرر کیا گیا ہے. خاندان کے بارے میں پوونواوال نے بھی سوال اٹھائے. انہوں نے کہا کہ صرف ایک شخص کسی خاندان سے پوزیشن حاصل کرنی چاہئے، اس سے کوئی فرق نہیں. کسی کے لئے کوئی فرق نہیں ہونا چاہئے. خاندان کے صرف ایک شخص کو ایک ٹکٹ ملنا چاہئے، چاہے وہ شہزاد پولا والا یا راہول گاندھی ہو.

مہاراج کانگریس سیکرٹری شہزاد نے ٹویٹر پر لکھا کہ کسی کو میری پارٹی میں کوئی مسئلہ نہیں. کانگریس کو آگے بڑھنے کی صلاحیت ہے. میرا ضمیر مجھے لچکدار اور چمکتا پر خاموش نہیں ہونے دے گا. شہزاد نے اپنے بھائی تحسین پوناوالا کو ٹیگ کرتے ہوئے کہا کہ تحسین کو اس مسئلے کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہے ورنہ انہوں نے مجھے بھی روک دیا ہوتا. طاہرین سونیا گاندھی کے بہو رابرٹ وڈرا کی بہو ہے. پوناوالا نے کہا کہ انہیں معلوم ہے کہ یہ مسئلہ اٹھانے کے بعد اب پارٹی کے اندر اندر ان پر حملے شروع ہو جائیں گے. مجھے اس مسئلہ کو بڑھانے کی جرات تھی. جو لوگ مجھ پر حملہ کرتے ہیں وہ اب فعال ہوسکتے ہیں لیکن میرے حقائق ہیں.

شہزاد نے کہا کہ اگر منصفانہ انتخاب ہوتا ہے تو وہ صدارتی انتخابات کا مقابلہ کرے گا. انہوں نے کہا کہ میں 2011 سے میں راہل گاندھی کا اپواٹمےٹ لینا چاہ رہا ہوں تاکہ انہیں پارٹی میں خامیوں کے بارے میں معلومات دے سکوں. میرا مقصد پارٹی کو بے نقاب نہیں بلکہ پارٹی کے اندر نظام کو بہتر بنانے کے لئے ہے. میں پارٹی کی پالیسیوں میں بہتری چاہتا ہوں. میں راہول گاندھی کو ان مسائل پر کھڑے ہونے کا انتظار کر رہا ہوں. انہوں نے پوچھا کہ وہ کسی خاندان کے کسی رکن کو کیوں نہیں ٹکٹ دیتا ہے؟

شہزاد کے کانگریس صدر کے انتخاب کو نفاق بتانے کی ٹویٹس کے بعد ان کے بھائی اور سونیا کے داماد رابرٹ واڈرا کے بہنوئی تحسین نے ایک کے بعد ایک کئی ٹویٹ کئے. انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ میں حیران ہوں کہ جب کانگریس گجرات جیت رہی ہے تو وہ کیا کر رہے ہیں؟ میں سرکاری طور پر شہزاد کے ساتھ تمام سیاسی تعلقات کو توڑتا ہوں. تحسن نے اپنے ٹویٹ میں بھی کہا کہ کانگریس راہول گاندھی کو اپنے صدر کے طور پر کی ضرورت ہے. تحسن نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ کانگریس میں کوئی بھی گاندھی کے خلاف مقابلہ نہیں کر سکتا. انہوں نے کہا کہ اگر شہزاد پارٹی کے صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے خواہاں ہیں، تو انہیں انتخابی میدان میں جانا چاہئے. طاہرین کا کہنا ہے کہ شہزاد کا بیان اس نے بڑا درد بنا لیا ہے.

ایک طرف شہزاد نے راہل کو صدر بنانے کو لے کر سوال کھڑے کئے ہیں وہیں دوسری طرف کانگریس ہیڈکوارٹر میں راہل گاندھی کی تاجپوشی کی سختی تیاریاں چل رہی ہیں. کانگریس کے سینٹرل انتخابی اتھارٹی کے چیئرمین مولپلی رامچندر نے انتخابی مہم کے لئے ریکارڈنگ آفیسر کیا ہے. راہول کے نامزد کاغذات کو بھرنے کے لئے انتظامات کیے جا رہے ہیں. انتخابی عمل کے تحت، جمعرات سے نامزد ہونے والے نامزد ہونا لازمی ہے. بتایا جا رہا ہے کہ راہل گاندھی 3 یا چار دسمبر کو کاغذات نامزدگی داخل کریں گے کیونکہ راہل 1 اور 2 دسمبر کو کیرل میں رہیں گے. یہ خیال ہے کہ راہول کا انتخاب غیر منحصر ہوگا اور وہ انتخابات کا سامنا نہیں کرے گا. پارٹی کے قوانین کے مطابق اگر کوئی اور عہدہ پر دعویداری کرنا چاہے گا تو اس کے لئے پردیش کانگریس کمیٹی کے دس نمائندوں کی حمایت ضروری گے.

Leave a Comment

Copyright © Dailyaag - All Rights Reserved

Scroll to top