کشمیر بھر میں اربعین شہدائے کربلا عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا

کشمیر بھر میں اربعین شہدائے کربلا عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا قریہ قریہ سے جلوس عزاء برآمد ہوئے چھتہ بل سرینگر اور بمنہ بڈگام میں دو بڑے مرکزی جلوس پر امن طریقے سے اختتام پذیر ہوئے۔

کشمیر کے گوشہ و کنار میں اربعین حسینی مذہبی جوش و جذبہ اور عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا کشمیر کے تمام چھوٹے بڑے قصبوں اور مرکزی مقامات پر نماز جمعہ کے فوراً بعد جلوس عزاء برآمد ہوئے جبکہ نماز جمعہ سے پہلے مجالس عزاء منعقد ہوئیں جن میں عزاداروں کی بڑی بڑی تعداد نے شرکت کرکے امام عالی مقام اور دیگر شہدائے کربلا کو نذرانہ عقیدت پیش کیا۔

 

کشمیر کے مرکز سرینگر میں اتحاد المسلمین جموں و کشمیر کے اہتمام سے مجلس عزاء کا انعقاد کیا گیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں عزادارن امام حسین علیہ السلام نے شرکت کی مجلس کا آغاز صبح دس بجے سے ہوا جو نماز جمعہ تک جاری رہی جس میں وقفہ وقفہ سے کشمیری نامور زاکرین نے مرثیہ خوانی پیش کی مجلس کے اختتام پر جلوس عزاء برآمد ہوا۔

سینئر حریت رہنما اور اتحاد المسلمین جموں و کشمیر کے سرپرست اعلٰی مولانا محمد عباس انصاری اور صدر مولانا مسرور عباس انصاری نے بھی مجلس عزاء کے موقعہ پر اپنے جلوہ افروز خطابات میں پیغام کربلا کے مختلف گوشوں کو اجاگر کیا۔

مولانا مسرور عباس انصاری نے اپنے خطاب کے دوران انقلاب کربلا اور عصر حاضر کے تقاضوں کو بیان کرتے ہوئے امت اسلامیہ سے اپیل کی کہ وہ یک جٹ ہوکر اسلام دشمن قوتوں کے ناپاک سازشوں کا قلع قمع کریں۔

ادھر وسطی ضلع بڈگام کے بمنہ علاقے میں انجمن شرعی شیعان کے زیر اہتمام ایک مجلس عزاء منعقد ہوئی اور بعد از نماز جمعہ جلوس عزاء برآمد ہوا جہاں دسیوں ہزار عزاداروں نے شرکت کی عزاداروں نے ولایت فقیہ کے حمایت میں نعرے لگائے اور دشمنان اسلام و دشمنان ولایت فقیہ کے خلاف اپنے غم و غصہ کا بھی اظہار کیا عزاداروں کی بڑی تعداد مختلف ٹولیوں میں نوحہ خوانی اور سینہ زنی کررہے تھے اور ساتھ ساتھ میں رہبر عظیم الشان حضرت آیا اللہ خامنہ ای کی حمایت اور ان سے محبت کا اظہار بھی کررہے تھے۔

بزرگ کشمیری عالم دین اور انجمن کے سرپرست اعلٰی آغا سید محمد فضل اللہ الموسوی الصفوی اور تنظیم کے صدر آغا سید محمد ہادی موسوی کے خطابات بھی دیکھنے کو ملے جن میں انہوں نے فلسفہ شہادت حضرت امام حسین علیہ السلام پر تفصیل سے روشنی ڈالی آغا سید محمد ہادی موسوی نے کربلا معلیٰ میں کروڑوں زائرین کے اجتماع کو وحدت اسلامی کی عظم مثال قرار دیتے ہوئے عالمی میڈیا کی گمنامی پر افسوس کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ عالم اسلام کے معمولی سی باتوں پر واویلا مچانے والا نام نہاد میڈا عزاداروں کے سیلاب میں ڈوب گیا ہے اور عالم استعماریت دنیا کے سب سے بڑے اس اجتماع پر پردہ پوشی کرنے کی کوشش کررہے ہیں لیکن یہ ان کی خام خیالی ہے انہوں نے کہا کہ امام عالی مقام کے عقیدت مندوں کا یہ انقلاب بڑھتا جارہا ہے جو اسلام اور اہلبیت دشمنوں کے ناپاک عزائم کو خاک میں دفنا دیں گے آغا صاحب نے شریکتہ الحسین حضرت زینب سلام اللہ علیہا کے مشن کربلا پر تفصیل بھی روشنی ڈالی اور اس دوران آپ کے مشکلات اور مصائب کا بھی ذکر کیا۔

درایں اثنا تاریخی امام باڑہ بڈگام اور جڈی بل میں بھی عزاداری کے بڑے بڑے اجتماعات منعقد ہوئے جہاں کثیر تعداد میں عزاداروں نے شرکت کرکے شہدائے کربلا کو خراج عقیدت پیش کیا۔

ادھر صوبہ لداخ کے کرگل ضلع میں بھی اربعین حسینی کے جلوس برآمد ہوئے جن میں کرگلی عوام نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔

Leave a Comment

Copyright © Dailyaag - All Rights Reserved

Scroll to top