یوگی راج میں گے مدارس میں وندماترم پڑھنے کے فرمان نے بڑھائی ہلچل

لکھنؤ: یوم آزادی (15 اگست) کے موقع پر ہر کوئی آپ کی طرح ملک کی آزادی کے جشن میں ڈوب جاتا ہے. اس موقع پر ملک کے تئیں اپنا محبت اور احترام لگتا ہے، لیکن اس بار یوپی کی یوگی حکومت نے 15 اگست کو ریاست کے تمام مدارس کی ویڈیوگرافی کرنے کا حکم دیا ہے. یوگی حکومت نے یہ یقینی بنانے کا فیصلہ کیا ہے کہ 15 اگست کو ہر حال میں مدارس میں شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا جائے اور قومی ترانہ کے ساتھ ساتھ وندے ماترم کا گانا کیا جائے.

دراصل اترپردیش مدرسہ کونسل بورڈ کی جانب سے 3 اگست کو ضلع اقلیتی افسر کو ایک خط بھیج کر ہدایت کی ہے کہ یوم آزادی پر ہر مدرسے میں صبح آٹھ بجے پرچم کشائی کے بعد قومی اور وندے ماترم پڑھا جائے گا۔. ان تمام پروگراموں کی فوٹوگرافی اور ویڈیوگرافی ہوگی اور ضلع کے اقلیتی افسر کو سونپنے کا بھی حکم دیا گیا ہے. کہا گیا ہے کہ پرچم کشائی کے بعد قومی اور قومی گیتوں کو گایا جائے. جس کے بعد اب مدارس میں ندے ماترم کے تعلق سے چہ میگوئیاں شروع ہو گئی ہیں.

کیا لکھا ہے خط میں؟
حکومت کی جانب سے 15 اگست کو لے کر پروگرام کی مکمل خاکہ تیار کر لیا گیا ہے۔
-اس میں کہا گیا ہے کہ ترگا لہرانے کے ساتھ قومی گیت بھی لازمی ہے.
-اسكے ساتھ ساتھ تمام مدارس میں شہیدوں کو خراج تحسین بھی پیش کیا جائے۔
-مدرسے میں پڑھنے والے طلباء و طالبات کو قومی گیت بھی پیش کرنا ہوگا.
-يوگي حکومت نے تمام مدارس کی ویڈیوگرافی کرانے کے بھی واضح ہدایت کی ہے.

یوپی کی تاریخ میں ایسا پہلی بار ہونے جا رہا ہے کہ مدرسہ بورڈ کی جانب سے خط لکھ کر یوم آزادی منانے کا حکم بھیجا گیا اور ساتھ ہی پہلی بار ویڈیوگرافی کے ذریعے مدارس پر نظر رکھی جائے گی.

کیا کہتے ہیں مسلم مذہبی رہنما؟
مدرسہ پریشد طرف سے بھیجے گئے خط میں قومی ترانے کے گانے اور وڈيوگرافی کرنے پر مسلم مذہبی رہنما نے اعتراض کیا ہے | مولانا سفیان کا کہنا ہے کہ ہمیں قومی پر کوئی اعتراض نہیں، لیکن قومی ترانے ہم نہیں گانا کر سکتے | حکومت مسلمانوں پر کب تک شک کرے گی حکومت مدارس کی وڈيوگرافی کرا کر، مدارس کے تئیں اپنی منشا ظاہر کر رہی ہے انہوں نے حکومت سے یہ بھی پوچھا ہے کہ کیا آر ایس ایس کی طرف سے آر ایس ایس کے زیر انتظام اسکولوں کی بھی ویڈیوگرافی کرائی جائے گی.

وزیر نے کیا کہا؟
یوپی حکومت کے خیراتی امور کے وزیر لکشمی نارائن چودھری نے کہا کہ یوگی حکومت سب کا ساتھ، سب کا ترقی کا نعرہ لے کر چل رہی ہے اور اس طرح کے خط بھیجنا ایک سادہ بات ہے ہم سب ہندوستانی ہے اور ہمیں یوم آزادی بڑے فخر کے ساتھ ماننا چاہیے | آج کا وقت جدید ٹےكنك کا ہے اور وڈيوگراپھي کرانے کا صرف ایک ہی وجہ ہے کہ وقت وقت پر مدارس کے بچوں کو یہ دکھایا جا سکے

بتا دیں کہ اس وقت اتر پردیش میں تقریبا 8،000 مدرسے ہیں جو صوبہ مدرسہ کونسل کے تحت آتے ہیں. ان میں سے 560 مدرسے ایسے ہیں جو مکمل طور پر حکومت سے ملے مالی امداد پر چلتے ہیں.

Leave a Comment

Copyright © Dailyaag - All Rights Reserved

Scroll to top